تراشیدہ پھولوں

پھولوں کے کاشتکار تراشیدہ پھولوں اور ہائبرڈ ٹی روز کی کاشت مارچ کے آخر تک مکمل کر کے اچھی پیداوار حاصل کر سکتے ہیں، ماہرین ہارٹیکلچر

فیصل آباد(عکس آن لائن):جامعہ زرعیہ فیصل ٓباد کے ماہرین ہارٹیکلچر و گلبانی نے کہا کہ پھولوں کے کاشتکارلیڈیز فرسٹ،کارڈینل، کوئین الزبتھ، پیراڈائیز، اینجلیق، فرسٹ ریڈ، گولڈ میڈل، گولڈن ٹائم، ایمرلڈگرین، فریگرنٹ کلاوڈ، آئس برگ، کلیڈیئر، روزی چیک، فارمولا ون، تبت، کلاسک، بلیک بکارا، لوگیم، منڈیل، اینجلیق نیو ریڈ وغیرہ کی کاشت مارچ کے آخر تک مکمل کر کے اچھی پیداوار حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے بتایاکہ ہائبرڈ گلاب کی مختلف اقسام مختلف انواع کی آب وہوا اور ہر قسم کی زمینوں میں کاشت کی جاسکتی ہیں۔

انہوں نے کہاکہ کوئین آف فلاور کو جہاں بطور کٹ فلاور انتہائی اہمیت حاصل ہے وہیں یہ اپنی خوشبو اور خوبصورتی کے باعث بھی انتہائی پسند کئے جاتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ کاشتکاروں کوجربرا نامی گلابی، جامنی، سفید،سرخ، کریم، اورنج، پیلے دلکش رنگوں کے پھولوں کی کاشت رواں ماہ کے دوران مکمل کرنے کی ہدایت کی گئی ہے اور کہاگیاہے کہ جربرا کی 40اقسام کاشت کی جاتی ہیں اور بطور تراشیدہ پھول جربرا کارنیشن، گل دادی اور گل لالہ کے بعد پھولوں میں چوتھے نمبر پر ہے جسے پاکستان سمیت دنیا بھر میں خوبصورت تراشیدہ پھول کے طور پر پسند کیاجاتاہے۔ انہوں نے بتایاکہ جربرا کے پودے کی اونچائی 18سے 24 سینٹی میٹر اور پھول کاسائز 4سے 10سینٹی میٹر ہوتاہے۔

انہوں نے کہاکہ کاشتکار رواں ماہ کے دوران ہائبرڈ ٹی روز کی مختلف اقسام کی کاشت بھی مکمل کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ بھربھری، ذرخیز، اچھے نکاس اور 6 سے 6.5 تک تعامل کی حامل زمین شاندار فصل کی ضامن ہوتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ گلاب اور ہائبرڈ ٹی روز کی دیگر اقسام کی کاشت کیلئے زمین کی تیاری موسم گرما میں کی جاتی ہے تاکہ خوب دھوپ لگنے اور موسم برسات کی بارش میں زمین اچھی طرح تیار ہو جائے۔ انہوں نے ہائبرڈ ٹی روز کیلئے پودے سے پودے کا فاصلہ دو سے اڑھائی فٹ رکھنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں