چین

روس کی یوکرین کے مختلف شہروں پر بمباری، دارالحکومت کیف کی جانب پیش قدمی

ماسکو /کیف(عکس آن لائن) روس کی یوکرین کے شمالی شہروں میں شدید بمباری اور جنگی کارروائیاں جاری ہیں اور دارالحکومت کیف پر بھی حملے کیلئے روسی افواج اکٹھی ہونا شروع ہو گئی ہیں اور ان کی پیش قدمی جاری رہی ۔ میڈیارپورٹ کے مطابق یوکرینی حکام نے جنوبی بندرگاہ کے شہر ماریوپول اور مشرقی شہر خار کیف میں سنگین انسانی حالات کی اطلاع دی ہے۔ایک سیٹلائٹ امیجنگ کمپنی میکسار کے مطابق ایک روسی فوجی قافلہ کیف کے قریب پہنچ رہا ہے جس سے یوکرین کے دارالحکومت پر نئے حملوں کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔دوسری جانب روس کی یوکرین کے شمال مشرق سیدارالحکومت تک جنگی پیش رفت میں اضافہ دیکھا جارہا ہے، مسلسل بمباری اور فائرنگ کے سبب کچھ علاقوں میں شہری اپنے پیاروں کی میتوں کی تدفین سے بھی قاصر ہیں۔

روس کی جانب سے شام اور چیچنیا میں کی گئی ماضی کی کارروائیوں میں بھی یہی حکمت عملی اپنائی گئی تھی کہ مسلح مزاحمت کو مسلسل فضائی حملوں اور گولہ باری سے کچل دیا جائے،اس قسم کے حملوں نے جنوبی ساحلی شہر ماریوپول کا رابطہ ملک سے منقطع کر دیا ہے اور اگر جنگ جاری رہی تو کیف اور یوکرین کے دیگر حصوں کا بھی یہی انجام ہو سکتا ہے۔علاوہ ازیں یوکرینی حکام نے روسی فورسز پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے یوکرین کے جنوبی شہر میلیتوپول کے میئر کو اغوا کر لیا ہے،

یہ شہر اب روسی فوج کے قبضے میں ہے۔یوکرینی وزارت داخلہ کے مشیر کا کہنا ہے کہ میلتوپول کے کرائسز مرکز میں 10 سپاہی داخل ہوئے جنہوں نے میئر ایوان فیدروف کو اغوا کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ۔ایک ویڈیو پیغام میں یوکرینی صدر ویلادمیر زیلنسکی نے اغوا کی مذمت کرتے ہوئے انہیں ایک بہادر میئر قرار دیا جو ثابت قدمی سے یوکرین کا دفاع کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں